ایک دن امام حسین علیہ السلام کی ننھی بیٹی جناب سکینہ سلام اللہ نے اپنے بھائی امام زین العابدین کے پاس جاکر سوال کیا

زن.دان کے اندھی.روں میں کئی دن اور رات گزر جانے کے بعد ایک دن امام حسین علی السلام کی ننھی بیٹی جناب سکینہ سلام اللہ علیہا نے اپنے بھائی امام زین العابدین علیہ السلام کے پاس جا کر ایک سوال کیا۔ بھائی سجاد آپ امام وقت ہیں اور امام وقت ہر علم سے آراستہ ہوتا ہے آپ مجھے بتائیں کہ پیاس کی کتنی منزلیں ہوتی ہیں؟ جناب سکینہ سلام اللہ کا یہ سوال سن کر جناب زینب سلام اللہ علیہا ت۔ڑ۔پ گئیں۔

آگے بڑھ کر جناب سکینہ سلام اللہ کو گود میں اٹھا یا پیا ر کیا اور کہا کہ میری بچی تو ایسا کیوں پوچھتی ہے امام سجاد علیہ السلام نے کہا، پھو پھی اماں سکینہ نے یہ سوال اپنے وقت کے امام سے کیا ہے اور مجھ پہ لازم ہے کی میں اس سوال کا جواب دوں۔ امام نے فر ما یا بہن سکینہ پ یاس کی کل چار منزلیں ہوتی ہیں پہلی منزل وہ ہوتی ہے جب انسان اتنا پ یاسا ہو کہ اسے آنکھوں سے دھ۔ند ل۔ا سا دکھائی دے اور زمین اور آسمان کے درمیان کوئی فرق محسوس نہ ہو۔جناب سکینہ سلام اللہ نے کہا جی ہاں میں نے اپنے بھائی قاسم کو با با سے کہتے سنا تھا ۔چ۔چ۔ا ج۔ان میں اتنا پیا سا ہوں کہ مجھے زمین سے آسمان تک صرف دھ۔واں سا د کھائی دیتا ہے۔

امام نے پھر فر ما یا پ یاس کی دوسری منزل وہ ہے۔ جب کسی کی زبان سو ک۔ھ کر تا لو سے چپک جائے۔ جناب سکینہ سلام اللہ نے کہا جی ہاں جب بھائی اکبر نے اپنی خشک زبان ب۔ا ب۔ا کے دہ۔ن میں رکھ کر با ہر نکال لی تھی اور کہا تھا با۔ ب۔ا آپ کی زبان تو میری زبان سے زیادہ خشک ہے۔ پھر شاید میرا ب۔ا ب۔ا پ یاس کی دوسری منزل پہ تھا امام نے پھر فر ما یا پ یاس کی تیسری منزل وہ ہے جب کسی مچھلی کو پا نی سے با ہر نکال کر ریت پر ڈال دیا جا تا ہے اور وہ مچھلی کچھ دیر ت۔ڑپ نے کے بعد بالکل ساک۔ت سی ہو کر اپنا منہ کھو لتی ہے اور بند کر تی ہے۔

جناب سکینہ سلام اللہ نے کہا جی ہاں جب میرے با با نے بھائی علی اصغر کو ک۔ر بلا کی ریت پر ل۔ٹ۔ا دیا تھا۔ تو اصغر بھی ویسے ہی ت۔ڑپ۔ن ے کے بعد سا ک۔ت سا تھا۔اور اپنا منہ ک۔ھو لتا تھا پھر بند کر تا تھا شاید میرا بھائی اس وقت پ یاس کی تیسری منزل میں تھا امام نے پھر فر ما یا پ یاس کی چوتھی اور آخری منزل وہ ہے جب انسان کے جسم کی نمی با لکل ختم ہو جا تی ہے۔ اور اس کا گ۔وشت خت۔م ہو جاتا ہے ۔پھر انسان کی م و ت ہو جا تی ہے۔ اتنا سن کر جناب سکینہ نے اپنے ہاتھوں کو امام کے آ گے کیا اور کہا بھائی سجاد دیکھو میرے جس۔م کے گ.وش ت نے ساتھ چھ۔۔وڑ دیا ہے۔ میں شاید پ یاس کی آخری منزل پہ ہوں اور عنقریب اپنے ب۔ا ۔ب۔ا کے پاس جانے والی ہوں جناب سکینہ سلام اللہ کے یہ الفاظ سن کر ق۔ید خانے میں ایک کہ۔رام بر پا ہو گیا۔

Categories

Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *