”سونف اور تیز پتے کے خاص حکیمی فائدے“

تیز پات جسے تیز پتہ بھی کہا جاتا ہے، ایشائی ممالک میں عام طور پر کھانوں میں محض خوشبو اور ذائقے کے لیے استعمال کیا جاتا ہے اور زیادہ تر خواتین اس کے دیگر طبی فوائد سے آگاہ ہی نہیں ہیں جبکہ ماہرین کا کہنا ہے کہ تیز پات ذہنی تناؤ کم کرنے سمیت دیگر بیماریوں میں معاون ثابت ہوتا ہے۔غذائی و طبی ماہرین کی جانب سے تیز پات کے بے شمار فوائد گنوائے جاتے ہیں جبکہ ماہرین جڑی بوٹیوں کے مطابق کھانوں میں استعمال کیے جانے والا تیز پات ایک دوا کی طرح صحت پر اثر انداز ہوتا ہے، اس میں کچھ ایسے قدرتی اجزاء پائے جاتے ہیں جو دماغ کو پُرسکون رہنے میں مدد فراہم کرتے ہیں

جبکہ تیز پتہ سانس لینے میں دشواری جیسی شکایت بھی دور کرتا ہے۔سونے سے قبل اگر ایک تیز پات کسی برتن میں جلا کر کمرے میں رکھ دیں (کمرے میں دھونی دیں لیں) اور کھڑکیاں، دروازے بند کر دیں تو اس کے نتیجے میں انسان انتہائی پُرسکون نیند سو سکتا ہے کیوں کہ اس سے سانس کی دشواری دُور ہوجاتی ہے اور فضا میں ایک خوشگوار سی خوشبو بھی پھیل جاتی ہے، یہ ٹوٹکا خصوصاً دَمے کے مریضوں کے لیے بے حد مفید ہے۔علاوہ ازیں جس جگہ مچھر بہت زیادہ ہوں اگر وہاں ایک تیز پات جلا دیں تو مچھر بھاگ جاتے ہیں۔

گرتے بالوں کے علاج کے لیے دو کپ پانی میں 8 سے 10عدد تیز پات اُبال لیں، عام روٹین کے مطابق شیمپو سے بال دھو کر آخر میں اس پانی سے بالوں کو نتھار لیں، 7 دنوں تک لگاتار اس عمل کو دہرائیں، حیرت انگیز نتائج دیکھ کر آپ خود دنگ رہ جائیں گے۔طبی ماہرین کے مطابق تیز پات جوڑوں کے درد اور ورم میں آرام پہنچانے کے علاوہ سر درد اور بے چینی کی کیفیت ختم کرنے میں بھی معاون ثابت ہوتا ہے، اس کا استعمال قوت مدافعت کو بیماریوں کے خلاف مضبوط بناتا ہے۔جڑی بوٹی میں شمار کی جانے والی سونف کے استعمال سے انسانی مجموعی صحت سمیت خوبصورتی پر بھی بے

شمار فوائد مرتب ہوتے ہیں جبکہ اس کا استعمال اگر دودھ میں پکا کر کیا جائے تو اس کی افادیت اور دودھ کی غذائیت میں مزید اضافہ ہو جاتا ہے۔ سونف تقریباً ہر گھر میں موجود ہوتی ہے مگر اس کا صحیح استعمال کرنا بہت کم لوگ جانتے ہیں، سونف کو کھانوں سمیت چائے یا قہوے میں استعمال کیا جاتا ہے، دونوں طرح سے ہی اس کا استعمال سانسوں کو تازہ دم اور ہاضمے کی کارکردگی کو بہتر بناتا ہے مگر اس کا دودھ کے ساتھ استعمال کرنے کے نتیجے میں صحت پر بے شمار مثبت اثرات مرتب ہوتے ہیں، سونف والا دودھ میٹا بالزم کا نظام بہتر اور جسم سے مضر صحت مواد کا اخراج ممکن بنا کر مجموعی صحت پر اثر انداز ہوتا ہے۔

دودھ میں بھرپور غذائی اجزاء جیسے کہ معدنیات، روغن اور وٹامنز پائے جاتے ہیں، اس لیے دودھ کو مکمل غذا بھی کہا جاتا ہے، دودھ کے ایک گلاس میں اگر ایک چمچ سونف ڈال کر روزانہ کی بنیاد پر استعمال کر لیا جائے تو اس کی افادیت بڑھ جاتی ہے اور کئی طرح کی بیماریوں سے نجات بھی حاصل ہوتی ہے۔سونف والے دودھ میں آئرن، پوٹاشیم، کیلشیم ، میگنیشیم اور فاسفورس بڑی مقدار میں موجود ہوتا ہے، یہی وجہ ہے کہ اس کے پینے سے کیلشیم کی کمی تیزی سے دور ہوتی ہے، ہڈیاں مضبوط، ہر وقت کی تھکان اور سستی دور، اعصابی اور پٹھوں کی کمزوری کا بھی خاتمہ ہوتا ہے۔

Categories

Comments are closed.