ایک عورت شادی سے پہلے خوبصورت جسم کے ساتھ نکاح کر کے اپناخو بصورت جسم

یک عورت شادی سے پہلے خوبصورت جسم کے ساتھ نکاح کے کنٹریکٹ ڈاکومینٹ کے ذریعے اپنا خوبصورت جسم ہمارے حوالے کر دیتی ہے اور پھر وہ اپنی کوکھ میں ہمارے بچے کو نو ماہ تک پالتی ہے درد سہتی ہے اور اس سے ہماری نسل پروان چڑھتی ہے ،

پھر اسکی کوکھ پر جھریاں پڑتی ہیں اسکا سڈول جسم خوبصورتی کھو دیتا ہے اور ہم اسے ناپسند کرنے لگتے ہیں کیوں ۔۔۔ ؟ اک انسان ہم سے زندگی شروع کر کے ہم پر ہی ختم کر دیتا کیا اس کا دل نہیں ہو تا کیا ہم لوگ تھوڑے سے لاڈ بھی نہیں اٹھا سکتے انکے چھوٹی چھوٹی خوشیوں پر جھومنے والیوں کو ہم ترسا دیتے مسکرانے پر بھی خدارا قدر کیا کر میں اللہ کی ان رحمتوں کی وہ چاہے کسی بھی روپ میں ہو ماں بہن بیوی بیٹی انکی عزت کیا کر میں کسی کی دوسرے کی سمجھ کر نہیں اپنی سمجھ کر کچھ مرد یہاں بھی کہیں گے میں غلط کہہ رہا ہوں ایسا نہیں ہے ،

لیکن جو میں نے مشاہدہ کیا اسکے مطابق مرد بڑے سفاک ہوتے ہیں اور یہ عورت کے جسم کے ہی بھوکے ہوتے ہیں ۔ پھر بھی مجھ ناچیز کی کوئی بات کسی کو بری لگی ہو تو معافی چاہتا ہوں میرا مقصد کسی کا دل دکھانا نہیں تھا

Categories

Comments are closed.