ایک شخص نے اپنی نو جوان اور خوبصورت

ایک شخص نے اپنی نو جوان اور خوبصورت بیوی کے کہنے پر اپنی ماں کو گھر سے نکال کر گدا گری پر مجبور کر دیا بوڑھی ماں بچاری ایسے حالات میں دو دن میں ہی مر گئی وقت کے بادشاہ نے خواب دیکھا اور خواب میں ایک بزرگ نے بادشاہ سے اسی آدمی کی طرف اشارہ کر تے ہوئے کہا اس بستی میں اس شخص کو اپنے پاس بلا ؤ اور اسے سو اونٹ سونے کی اشر فیوں سے لاد کر دو با دشاہ غور کرنے والوں میں سے تھا اسے پتہ چل گیا تھا کہ اس کا خواب عام خواب نہیں ہے اور کسی بات کی طرف اشارہ ہے چنانچہ اس نے اپنے دا نا وزیر کو اپنا خواب بیان کیا وزیر نے بادشاہ سے کہا بادشاہ سلا مت اگر اس بستی میں وہ آ دمی رہتا ہے جو آ پ کو خواب میں بتا یا گیا ہے۔ تو آپ کے خو اب میں ضرور کوئی حکمت چھپی ہو ئی ہے۔

بادشاہ نے وزیر کی بات سن کر اپنے ساتھ سپا ہیوں کا دستہ لیا اور بزرگ کی بتائی ہوئی بستی میں خود جا پہنچا اور بستی کے باہر درخت کے نیچے بیٹھے ایک بوڑھے سے اس شخص کے بارے میں دریافت کیا اس بوڑھے نے بادشاہ نسے کہا وہ کوئی اچھا انسان نہیں ہے وہ اپنی ماں پر ظلم کر تا ہے۔ اور اس کے ظلم کی تاب نہ لاتے ہوئے اس کی بوڑھی ماں دنیا سے رخصت ہو گئی جا ئیں بستی میں پہلا مکان اسی کا ہے بادشاہ جب اس شخص کے دروازے پر پہنچا تو وہ شخص با د شاہ کو دیکھ کر خوف زدہ ہو گیا اسے لگا کہ بادشاہ اب اسے اس کے اعما لوں کی سزا دے گا۔

مگر بادشاہ اسے اپنے ساتھ لے کر آ یا۔ اور اسے سو اونٹ سونے کی اشر فیوں سے لاد کر انعام کے طور پر دیے جنہیں پا کر ظالم کی تو لاٹری لگ گئی وہ بادشاہ کا شکر ادا کرتے ہوئے دولت کے نشے میں چور بستی واپس آ گیا اور عیش و عشرت کی زندگی گزارنی شروع کر دی ادھر بادشاہ اور اس کے دانہ وزیر نے اس شخص پر مکمل نظر رکھی ہو ئی تھی مگر کئی سال گزر گئے اس شخص کے حالات میں کوئی تبدیلی نہ آ ئی وہ عیش و عشرت اور شباب اور شراب میں ڈو با اپنی مستی میں مصروف زندگی گزار رہا تھا پھر ایک دن نشے میں اپنے ہی گھر کے چھت سے نیچے گرا اور مر گیا بادشاہ کو جب اس کے مرنے کی خبر ملی تو وہ واپس اس شخص کی بستی میں گیا۔

اور پھر بستی کے با ہر درخت کے نیچے اسی بوڑھے سے ملا جس نے اسے اس شخص کا پتہ بتا یا تھا بوڑھا جو اہل ِ علم تھا بادشاہ کو دیکھا اور بو لا جس دن میں نے آپ کو اس شخص کی شکا یت لگائی تھی میں چاہتا تھا کہ آپ اسے سزا دیں تا کہ شاید اس کے گنا ہوں کی کچھ تلا فی ہو جائے مگر مالک کو کچھ اور ہی منظور تھا بادشاہ نے بوڑھے سے پو چھا۔ مالک کو کیا منظور تھا بوڑھا بو لا اس دن آ پ نے اسے سونے سے لدے ہوئے اونٹ عنا یت کیے تو مجھے پتہ چل گیا کہ رب کا ئنات اسے ڈھیل دے رہا ہے اس کی رسی کو دراز کر رہا ہے۔

اور اللہ نہیں چا ہتا کہ یہ شخص توبہ کے قریب بھی جائے اور پھر ایسا ہی ہوا دولت کے نشے میں چور ہو کروہ ہر چیز بھو ل گیا۔ آسائشوں نے اسے نہ تو اس کے خالق کو یاد کرنے دیا اور نہ ہی کبھی اسے اپنے کئے ہوئے کا موں پر ندامت ہوئی اسی عیش و عشت میں اس نے کبھی تو بہ نہیں کی اور ہلاک ہو گیا یہ واقعہ نصیحت ہے کہ اپنے والدین کی خوب خدمت کر یں اور اللہ سے توبہ کر تے رہیں۔ کہیں ہم اللہ تعالیٰ کی دی ہوئی ڈھیل سے نا جا ئز فائدہ تو نہیں اٹھا رہے اگر ایسا ہے تو فوراً توبہ کر لیجئے کہیں ایسا نہ ہو کہ وقت ہمیں توبہ کی مہلت ہی نہ دے۔

Categories

Comments are closed.